پاکستان میں کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کے ساتھ ساتھ سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر جعلی اور گمراہ کن خبروں میں اضافہ ہوا ہے- کورونا وائرس سے متعلق زیادہ تر معلومات اسکے علاج کے بارے میں ہوتی ہیں- اسکے علاوہ متعدد پوسٹس کورونا وائرس کو ایک سازش بھی قرار دیتی ہیں- پچھلے دنو ایک وائرل پوسٹ میں یہ دعویٰ کیا گیا تھا کے اس وائرس کا علاج سنا مکّی سے کیا جا سکتا ہے۔

یہ دعویٰ برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ایک ماہر نباتات نذیر احمد نے کیا تھا جس میں یہ بتایا گیا تھا کہ انہو نے کورونا وائرس کے مریضوں کا علاج سنا مکّی کے استعمال سے کیا ہے- یہ ویڈیو سماجی رابطے کی ویب سائٹس اور دیگر فوری پیغام رسائی سروسز پہ شیر کی گی تھی- اس ویڈیو کو ایک لاکھ سے زیادہ لوگوں نے صرف یو ٹیوب پر دیکھا ہے۔

یہ ایک حقیقت ہے کہ کورونا وائرس کا اس وقت کوئی علاج موجود نہیں- سنا مکّی غیر سوزشی جڑی بوٹی ہے جو کہ میدے کے مسائل کے لئے مفید ہے اور قوت مدافعت کو بڑھاتی ہے لیکن اس میں کورونا وائرس کا علاج موجود نہیں ہے- لہذا سنا مکّی سے کورونا وائرس کا علاج محض ایک بے بنیاد دعویٰ ہے۔

LEAVE A REPLY