شریف ابراھیم

پاکستان کے خوبصورت ساحلی شہر گوادر کے کرکٹ اسٹیڈیم میں جو گوادر کے کوہ باتیل پہاڑی کے دامن میں واقع ہے. جس کی خوبصورتی نے آجکل سوشل میڈیا میں دھوم مچادی ہے جس کی خوبصورتی کے باعث آئی آئی سی نے چیلنج دے دیا ہے کہ اس طرح کا کوئی اور اسٹیڈیم ہے تو سامنے لایا جائے تو بین الاقوامی کھلاڑیوں کے دل بھی گوادر کے اس خوبصورت میدان میں کھیلنے کو مچل رہے ہیں۔

اسٹیڈیم کو گوادر سے تعلق رکھنے والے مرحوم سنیٹر محمد اسحاق کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔  سنیٹر محمد اسحاق کرکٹ اسٹیڈیم کے کام کا آغاز 2015  میں شروع ہوا تھا اور گزشتہ سال نومبر کے مہینے میں وزیراعلی بلوچستان جام کمال نے اس اسٹیڈیم کا افتتاح کیا۔

سوشل میڈیا پے باز صارفین کی جانب سے اس میں شائقین کے بیٹھننے کی تعداد بڑھانے کے حوالے سے مختلف پروٹو ٹائپس بھی بنائے گئے تا کے زیادہ لوگ یہاں میچ سے محظوظ ہوسکیں۔

چار ایکڑ پر محیط اس اسٹیڈیم پر کل لاگت چار کروڑ روپے آئی ہے..جس میں اڈھائی ہزار شائقین کے بیٹھنے کی گنجائش ہےگوادر کی شناخت بندرگاہ اور CPEC منصوبہ ہوا کرتی تھی مگر اب اپنے منفرد کرکٹ اسٹیڈیم کی بدولت گوادر ایک اور پہچان بھی بنا سکتا ہے۔

LEAVE A REPLY