برکت اللہ بلوچ

رب کائنات نے ہرانسان میں کچھ صلاحتیں عطاکی ہیں لیکن اپنی صلاحیتوں کو پہچاننا اور بروئے کار لانا ہرانسان کے بس کی بات نہیں، جس نے اپنی صلاحیتوں کو پہچانا اور ان سے کام لیا وہی انسان باصلاحیت کہلاتا ہے۔

آج آپ کو پسنی سے تعلق رکھنے والی ایک ایسے ہی باصلاحیت آرٹسٹ سے ملاتے ہیں جس نام مارش محسن ہے جو آرٹ کو اپناشوق اور جنون کہتے ہیں، اگرچہ اس آرٹسٹ کی عمر صرف چودہ سال ہے لیکن ان کے کام کو دیکھ کر ہر انسان واہ واہ کرنے پر مجبور ہوجاتا ہے۔

مارش محسن نے پاک وائسز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہیکہ آرٹ کا شوق انھیں بچپن سے رہا ہے،جب وہ آٹھویں کلاس میں تھیں تو انھوں نے باقاعدہ اسکیچز بنانے شروع کئے تھے ان کے ماموں شگراللہ بلوچ جو بلوچستان کے بہت بڑے آرٹسٹ رہے ہیں انکے آئیڈیل ہیں اور ان ہی سے متاثر ہوکر انہوں نے اس شعبے کا انتخاب کیاہے۔

ابتداء میں صرف وہ وقت گزاری کے لئے اسکیچز بنایا کرتی تھی لیکن اب یہ ان کا جنون بن گیا ہے۔ اسکیچنگ سے انھیں سکون اور راحت ملتی ہے کیونکہ اسکیچز اپنی سوچ اور خیالات کا اظہار کرنےکا بہترین زریعہ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ان کا کوئی استاد نہیں ہے اور نہ ہی انہوں نے کھبی آرٹ کی کوئی کلاس لی ہے بلکہ یہ خدا کی عطا کردہ صلاحیت ہے۔

ان کا مذید کہنا تھا کہ آرٹ اب ان کا شوق اور جنون بن گیا ہے اور آرٹ ہی کو وہ اپنا کیریئر بناناچاہتی ہیں اور اس میں انھیں اپنے والدین کی بھرپور سپورٹ اور تعاون حاصل ہے وہ انھیں ایک کامیاب آرٹسٹ کے طور پر دیکھناچاہتے ہیں۔انہوں نے اپنے ایک پیغام میں کہاہیکہ ان کا دیگر والدین سے بھی گزارش ہیکہ وہ اپنے بچوں کے خواہش کے آگے رکاوٹ نہ بنیں انھیں اپنی مرضی کے شعبہ کا انتخاب کرنے کی بھرپور آذادی دیں کیونکہ انسان بہتر کارکردگی صرف اس شعبے میں دکھا سکتا ہے جو اس کا شوق اور جنون ہو۔

LEAVE A REPLY