نرگس انیس

بونستان پبلک لائبریری پنجگور  کے  قدیم  علاقے بونستان میں واقع ہے۔ یہ لائبریری ۔2018 کو گورنمنٹ  بوائز  ہائی اسکول بونستان کی چاردیواری میں  وجود میں آیا اور جولائی 2018 کو اس کا باقاعدہ  اہتمام کیا گیا۔

پبلک لائبریری ہونے کے باوجود  گورنمنٹ  بوائز  ہائی اسکول نہ صرف بونستان پبلک لائبریری کو جگہ فراہم کی بلکہ اپنے فنڈ سے اس لائبریری کو کتابیں اور فرنيچر مہیا کیا۔

بونستان میں کتب بینی کا رحجان پیدا کرنے کے لیے بی پی ایل کی جانب سے لائبریری میں سنڈے سرکل کے نام سے  ایک ہفتہ وار سریز کا آغاز کیا گیا۔ جس میں ہر ہفتے طلبہ اور کمیٹی کے مبمران مل کر ایک سرکل کااہتمام کرتے ہیں ۔ جس طرح سنڈے سرکل بچوں کے ٹیلنٹ کو ابھارنے میں کارگر سبط ہورہا ہے، شاید ہی کسی بڑے تعلیمی ادارے میں اس طرح کا ماحول ہو۔

سنڈے سرکل میں ہر طرح کے معلومات طلبہ فراہم کی جاتی ہے. بونستان پبلک لائبریری میں نوجوان بڑے جذبے کے ساتھ سیمینار، ورکشاپس، آگائی واک اور تربیتی پروگرام کا اہتمام کرتے ہیں ۔ایسی بہت کم ہی لائبریریاں ہیں، جہاں پر طلبہ کو اپنے کورس کے کتابوں کے ساتھ ساتھ دوسرے شعبے زندگی کے بارے میں آشنا کیا جاتا ہیں۔

بونستان لائبریری وہ لائبریری ہے جہاں پر بچوں  کو ان کے بنیادی حقوق کے بارے میں آشنا کیا جاتا ہیں۔ مثلا چائلڈ ایبیوز، چائلڈ میرج اور چائلڈ لیبر جیسے مسائل کے بارے میں ان بچوں کو آگائی دی جاتی ہے۔ پچھلے دو سال سے شہر کے اعلی تعلیم یافتہ طلبہ اسکول کے طالب علموں  کو پڑھنے کے لیے رضاکارنہ طور پر محتلف مضامين  کے ٹیوشن کلاسز لینے اور ان کی کونسلینگ  کروارہے ہیں۔


فری آف کاسٹ ٹیوشن کلاسز کا تسلسل بونستان پبلک لائبریری میں عرصہ دراز سے جاری ہے۔ بونستان پبلک لائبریری کی ایک ممبر یوسف بلوچ نے پاک وائسز سے بات کرتے ہوۓ  بتایا کہ  یہ لائبریری ایک چوٹی سی لائبریری ہے لیکن یہاں پڑھنے لکھنے اور کتابوں کو ٹائم دینے والے بہت سے طالب علم  ہیں  اور لائبریری کے وسائل محدود ہیں لیکن یہ لائبریری کسی بڑی لائبریری سے کم نہیں ہے۔

بونستان پبلک لائبریری کے ایک ممبر میران شبیر  نے  بتایا  کہ لائبریری بننے سے پہلے ہمارے پاس ایسی کوئی جگہ نہیں تھی جہاں ہم بیٹھ کر اپنے کورس اور دیگر کتابوں کا مطالعہ کرتے۔ مگر لائبریری بننے کے بعد یہ ایک بہترین پلیٹ فارم ہے۔

ایک اور طالب علم سے ہماری بات ہوئی تواس نے ہمیں بتایا کہ لائبریری میں نہ صرف ہم اپنے  کتابوں کا مطالعہ کرتے ہیں بلکہ ہمارے سینئر ہمیں رہنمائی فراہم کرتے ہیں۔ سنڈے سرکل سے ہمارے کونسلینگ اور پروگرم میں بہتری آرہی ہیں اب تک ہم نے بہت کچھ سیکھا ہے. پہلے ہم اپنے حقوق سے بے خبر تھے مگر اب ہم اپنے حقوق کےبارے میں جانتے ہیں۔

ہر معاشرے میں لائبریری کی بڑی اہمیت ہے. علم کا فروغ محض تعلیمی ادارواں سے ہی مکمن نہیں. تعلیمی ترقی اور علم کے فروغ کا ایک مضبوط  ذریعہ  لائبریری ہے۔

بونستان پبلک لائبریری کے انچارچ ڈاکٹر نبیل نے پاک وائسز سے بات کرتے ہوۓ کہا کہ بونستان پبلک لائبریری رضاکارانہ طور پر لوگوں  کے تعاون سے چل رہی ہے۔ اس لائبریری کو مزید کتابیں اور فرنیچر کی ضرورت ہے. انہوں نے مزید بتایا کہ سوشل ویلفیر ڈیپارٹمنٹ سے رجسٹریشن کی ضرورت  ہے۔ اور اس میں مزید بہتری کے لیے بی پی ایل کو مزید کتابوں کے ساتھ ساتھ ڈیجیٹل پورشن کی بھی ضرورت ہے۔ جہاں طالب علم اور لائبریری ممبران  بزریعہ کمپيوٹر نہ صرف جدید دنیا سے منسلک ہو سکے بلکہ آن لائن کلاسز کورس  کی سہولت سے بھی فائدہ  حاصل کرسکے۔

LEAVE A REPLY