عمران کمار

ینگ ڈاکٹر عظمان طارق کی دنیا بھر کے سرجنز کے امتحانات ایم آرسی ایس میں پہلی پوزیشن حاصل کرلی. ڈاکٹر عظمان نے یہ اعزاز 8000 امیدواروں کو پیچھے چھوڑ کر حاصل کیا۔

ابتدائی طور پر ایم بی بی ایس کا امتحان شفا میڈیکل کالج سے صدارتی ایوارڈ کے ساتھ پوزیشن حاصل کر کے پاس کیا اور آغا خان ہسپتال کراچی میں ایک سال ہاؤس جاب کی اب شیخ زید ہسپتال شعبہ سرجیکل میں بطور ٹرینی سرجنز کے چوتھے سال میں زیر تعلیم ہیں۔

ینگ ڈاکٹر عظمان طارق رحیم یار خان میں شعبہ سرجری کے لیور ٹرانسپلانٹ، سرجری سنٹر بنانا چاہتے ہیں. انہوں نے خواہش ظاہر کی ہے کہ حکومت ینگ ڈاکٹرز کی سرپرستی کرتے ہوئے سرکاری سطح پر انہیں سرجری کے شعبہ میں سکالر شپ کے ذریعے پڑھائے تاکہ ہم صحت عامہ میں خود کفیل ہوں۔

انگلینڈ اور آئرلینڈ کے چاروں رائل کالجوں میں امتحان میں 93٪ نمبر حاصل کرکے طارق ٹائٹل حاصل کرنے والے پہلے پاکستانی بن گئے ہیں. انگلینڈ اور آئرلینڈ کے رائل کالج کے چار میڈیکل کالج ہیں ، جس کے تحت پوری دنیا میں ایم آر سی ایس امتحانات کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

رائل کالج آف سرجن کی رکنیت کے لئے خلیج ، یورپ ، بنگلہ دیش اور ہندوستان کے سرجنوں نے ایم آر سی ایس امتحان میں حصہ لیا تھا۔

ڈاکٹر محمد عثمان طارق اس وقت رحیم یار خان کے شیخ زید اسپتال سے جنرل سرجری میں اپنی ایف سی پی ایس کی تربیت لے رہے ہیں۔

ایم آر سی ایس امتحان سرجیکل کیریئر کا ایک اہم سنگ میل ہے۔ اس سے یہ طے ہوتا ہے کہ سرجیکل ٹرینی بنیادی تربیت کو مکمل کرنے اور ماہر سرجیکل ٹریننگ کی اعلی سطح تک ترقی کرنے کے لئے صحیح علم ، قابلیت اور صفات رکھتا ہے۔

LEAVE A REPLY